Editorial Note - اسٹاک ایکسچینج میں تیزی کا نیا ریکارڈ - column - 2017-05-17
| |
Home Page
اتوار یکم رمضان المبارک 1438ھ 28 مئی 2017ء
ادارتی نوٹ
May 17, 2017 | 12:00 am
اسٹاک ایکسچینج میں تیزی کا نیا ریکارڈ

Stock Exchange Men Tezi Ka Naya Record

کسی ملک کی معیشت کے جانچنے کا پیمانہ اس کا اسٹاک ایکس چینج ہوتا ہے۔ملک میں امن و امان کی صورتحال اچھی ہوگی تو سرمایہ کار اپنے سرمائے کو محفوظ سمجھتے ہوئے سرمایہ کاری کریں گے۔ نئی صنعتیں لگیں گی جس سے روزگار کے مواقع حاصل ہونگے اور عوام میں خوشحالی آئے گی اس تناظر میں یہ خبر یقیناً خوشی آئند ہے کہ پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں تیزی کا نیا ریکارڈ قائم ہوا ہے، کے ایس ای 100انڈکس 637پوائنٹ کے اضافے کے ساتھ 52ہزار کی حد عبور کرکے نئی بلند ترین سطح 5238787 پر پہنچ گیا جبکہ مارکیٹ سرمائے میں 1کھرب 10 ارب 2 کروڑ 61لاکھ 6ہزار 264روپے کا اضافہ ہوا ہے۔ تجارتی حجم میں 4 ارب 35 کروڑ 13 لاکھ 27 ہزار 838 روپے کی تیزی رہی۔ حصص کی فروخت میں بھی 60لاکھ 99 ہزار 210 کا اضافہ دیکھا گیا۔ نئے کاروباری ہفتے کے آغاز پر پیر کو بھی پی ایس ایکس میں تیزی کا رجحان برقرار رہا تھا اور چھ بالائی نفسیاتی حدیں عبور کرتے ہوئے 636.96 پوائنٹس کا اضافہ ہوا تھا۔ گزشتہ ہفتہ جمعہ سے پیر تک بالترتیب 3248، 32248، 13723اور 108478کی تیزی ریکارڈ کی گئی تھی اب پاکستان اسٹاک ایکسچینج ایشیا کا نمبر ون ایکسچینج بن گیا۔یہ صورتحال واضح کرتی ہے کہ حکومتی پالیسیوں کے مثبت نتائج برآمدہورہے ہیں۔ جس سے ملک کی معاشی حالت میں بہتری آئے گی، زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ ہوگا نئی صنعتیں قائم ہوں گی جس سے روزگار کےمواقع وسیع ہونگے۔ لیکن اس پہلو کو بھی نظرانداز نہیں کیا جاسکتا ہے کہ اس باب میں حکومت کو اب بھی بہت کچھ کرنا ہوگا۔ سب سے ضروری بجلی کی لوڈشیڈنگ پر قابو پانا ہے اس لئے کہ اس کی وجہ سے ہماری صنعتیں خاص طور پر ٹیکسٹائل کی صنعتوں کی پیداوار بہت متاثر ہورہی ہے۔ مزید یہ کہ بجلی کی نرخوں میں بھی کمی لانا ہوگی تاکہ ہمارے صنعتوں کی پیداواری لاگت میں کمی آئے اور وہ غیرملکی مصنوعات کا مقابلہ کرسکیں۔

.