Ghazi Salahuddin - Urdu Columns Pakistan | Jang Columns
| |
Home Page
اتوار یکم رمضان المبارک 1438ھ 28 مئی 2017ء
غازی صلاح الدین
خواب اور عذاب
May 27, 2017
جنوبی ایشیا کی زنجیر

میں یہ کہتا رہا ہوں کہ ہم تاریخ سے چھپے پھرتے ہیں۔ مڑ کر اس راستے کو دیکھنے کی ہم ہمت نہیں کرتے جس پر چل کر ہم یہاں تک پہنچے ہیں اور شاید اسی لئے ہم کسی بھی دوراہے پر صحیح راستہ چننے کی صلاحیت نہیں رکھتے کیونکہ تاریخ سے سیکھ کر ہی ہم اپنی منزل کا تعین کر سکتے ہیں۔ خاص طور پر اس تاریخ سے جو ہماری زندہ یادداشت کا حصّہ بھی ہے جیسے مشرقی...
May 13, 2017
امتحان میں نقل اور زندگی کا امتحان

شاعر نے تو کسی کو اپنے عمل کا حساب دینے سے اس لئے انکار کیا تھا کہ ’’سوال سارے غلط تھے، جواب کیا دیتے ‘‘ لیکن اگر مسئلہ عمل کا نہیں بلکہ اپنے علم کا حساب دینے کا ہوتا تو سوالات سے جان چھڑانے کی کوئی وجہ نہیں بنتی،خاص طور پر ایسی صورت میں کہ جب سوالات پڑھائے گئے علم تک محدود ہوں۔ امتحانات کی سیڑھی چڑھ کر ہی بچے اعلیٰ تعلیم کی بالائی...
May 06, 2017
میڈیا کا نوحہ

ان سلگتے ہوئے دنوں میں کہ جب سیاست کے درجہ حرارت سے جذبات میں ابال پیدا ہوتا جارہا ہے کسے یہ مہلت ہے کہ ٹھنڈے دل اور توجہ سے ملک کے حالات پر غور کرے۔ ویسے یہ کام تو میڈیا کا ہے۔ اور اس ہفتے تو میڈیا کو میڈیا کے بارے میں سوچنے اور بات کرنے کی ضرورت ہے۔ اس کی کئی وجوہات ہیں۔ 3؍مئی ہر سال پریس کی آزادی کے عالمی دن کے طور پر منایا جاتا ہے۔...
April 29, 2017
ذہنوں میں اور کیمپس پر دھول اڑ رہی ہے

پر آشوب زمانوں میں اعلیٰ ادب بھی لکھا جاتا رہا ہے اور نئی فکر اور انقلابی تحریکوں نے بھی جنم لیا ہے ۔ عالمی تاریخ پر انمٹ نقوش چھوڑ نے والے انقلا بات کا آغاز معاشرے کے پڑھے لکھے افراد کے ذہنوں میں پلنے والی سوچ سے ہوتا ہے۔ پھر اس سوچ کو سیاسی عمل میں تبدیل کرنے والی تحریک یاجماعت یا قیادت کارول بھی ضروری ہے۔ آپ فرانس کے انقلاب کی...
April 22, 2017
دولت کے پیچھے کیا ہے؟

جمعرات کی سہ پہر سے اب تک آپ پاناما کیس کے فیصلے کے بعد کے پاکستان میں جی رہے ہیں۔ لیکن کیا یہ نیا پاکستان اس پاکستان سے مختلف ہے جس میں آپ جمعرات کی صبح جاگے تھے؟ ظاہر ہے کہ ایسا نہیں ہے۔ پھر بھی، سیاسی سطح پر اس فیصلے نے بڑی ہلچل مچائی ہے اور موسم کے ساتھ ساتھ سیاست کے درجہ حرارت میں اضافہ ہوتا دکھائی دے رہا ہے۔ مزے کی بات یہ ہے کہ...
April 15, 2017
ملالہ پاکستان کی مگر پاکستان ملالہ کا نہیں

اگر کوئی کہانی کار چھ سات سال پہلے کسی ایسے ناول کا خاکہ بنانے بیٹھتا کہ جس کا مرکزی کردار پوری دنیا میں پاکستان کا چہرہ بن سکے تو اندازہ لگائیے کہ یہ اس کی خواب بننے کی صلاحیت کا کتنا بڑا امتحان ہوتا۔ یوں تو افسانوی ادب میں حقیقت سے گریز اور تخیل کی بازی گری کے تمام امکانات موجود ہیں لیکن کہانی کہنے کے چند بنیادی اصول بھی ہیں۔...
April 08, 2017
بھٹو ، کتاب اور راکھ میں چنگاری

اب تو یہ محسوس ہوتا ہے کہ جیسے یہ کسی اور زمانے کی بات ہے کیونکہ ٹیلی وژن کی دنیا اتنی بدل گئی ہے لیکن یہ اتنی پرانی بات بھی نہیں جب میں ’’جیوکتاب‘‘ کے نام سے ایک ہفتہ وار پروگرام کیا کرتا تھا۔ رسان سے کتابوں اور خاص طور پر ادب کے بارے میں گفتگو ہوتی تھی۔ اس پروگرام کی ایک قسط میں ، میںنے سراج الحق میمن کا انٹرویو کیا تھا کہ جو...
April 01, 2017
انتہا پسندی کا غلبہ قائم ہے

گزشتہ دنوں گاہے گاہے پاکستان کے لئے ایک نئے یا متبادل بیانئے کی بات ہوئی ہے۔ گویا اس ضرورت کو محسوس کیا جارہا ہے کہ اگر ہم پاکستان کو پرامن ، روشن خیال اور صحیح معنوں میں ایک جمہوری ملک بنانا چاہتے ہیں تو اس کےخدوخال کیا ہوں گے۔ اس کا منشور کیا ہوگا۔ اس کی سمت کا تعین کیسے ہوگا۔ اس متبادل بیانئے کی ضرورت اس لئے بھی ہے کہ مذہبی کٹر پن...
March 25, 2017
خوش رہنے اور زندگی جینے کے ڈھنگ

کبھی کبھی میں اپنے کسی واقف سے خاص طور پر اگر ان سے کئی دن بعد ملاقات ہو تو یہ سوال کرتا ہوں کہ کیا آپ اپنی زندگی سے خوش ہیں؟ سوال کسی حد تک ان رسمی کلمات سے ذرا مختلف ہے کہ ہیلو، کیا حال ہے، آپ کیسے ہیں؟ جواب بھی سوچے سمجھے بغیر دیا جاتا ہے۔ خدا کا شکر ہے، اللہ کا احسان ہے، گزر رہی ہے، ہاں ٹھیک ہوں۔ لیکن اگر کوئی واقعی اس سوال پر...
March 18, 2017
نیا پاکستان آپ خود بنائیں

اس ہفتے کی ایک بڑی خبر کہ جس کا تعلق ہم سب سے ہے کہ مردم شماری کا آغاز ہوچکا ہے اور یہ کام 19 سال بعد سپریم کورٹ کی سرزنش جیسی تاکید کے بعد کیا جارہا ہے۔ اس سلسلے میں جن خدشات یا تحفظات کا اظہار کیا جارہا ہے اس سے قطع نظر مردم شماری کی ضرورت اور اہمیت واضح ہے۔ اس طرح ہم پاکستان کے کئی بنیادی حقائق کا کھوج لگا پائیں گے۔ لیکن یہ مسئلہ...
March 11, 2017
شکست کی آواز

ایسا بھی ہوا ہے کہ میں یہ کالم لکھنے بیٹھا ہوں اور ذہن میں یہ سوچ کلبلانے لگی ہے کہ آخر اس سے کیا فائدہ ہے؟ یہ جانتے ہوئے کہ یہ الفاظ ملک کے سب سے بڑے اخبار میں شائع ہوں گے یہ خیال بھی تنگ کرتا ہے کہ ہمارے ملک میں لوگ بڑے شوق اور توجہ سے نہ اخبارات اور رسائل پڑھتے ہیں اور نہ کتابیں، یہ میرا صدقہ جاریہ ہے۔ میرا تجربہ یہ ہے کہ کسی...
February 25, 2017
ایک تاریخ جو ہم نے دنیا کو دی

کوئی دن ایسا نہیں جاتا کہ کوئی خبر، کوئی ذاتی تجربہ یا کوئی بھٹکی ہوئی سوچ آپ کو اپنے ملک کی صورتحال کو سمجھنے پر نہ اکساتی ہو۔ ایک کے بعد دوسرا سوال اپنا سر اٹھاتا ہے۔ ہم کہاں جا رہے ہیں؟ ہم کہاں آ گئے؟ کیا ہماری سمت کہ جس کا تعین کوئی اور کرتا ہے، درست ہے؟ ایک سطح پر تو یہ بے چینی ہماری عادت بن گئی ہے۔ میڈیا ہمارے ذہنوں کو مفلوج...
February 18, 2017
ماضی بھی بدلتا ہے

سوچا تو یہ تھا کہ کراچی کے جشن ادب یعنی کراچی لٹریچر فیسٹیول کو اس کالم کا موضوع بنائوں گا کیونکہ اس کا خمار بھی کئی دن باقی رہتا ہے اور اس کی تھکن بھی ایک، دو دن میں نہیں اترتی۔ یوں بھی گزشتہ اختتام ہفتہ کی ادبی اور ثقافتی سرگرمیاں اتنی ہنگامہ خیز اور فکر انگیز تھیں کہ ان میں شرکت ہی ایک یادگار تجربہ بن جاتا ہے۔ اب یہ سالانہ جشن...
February 11, 2017
جو دکھائی نہیں دیتے

کیا ہم کسی دل دکھانے والے سچ کی اذیت سے بچنے کیلئے دلاسہ دینے والے جھوٹ کو آسانی سے قبول کرلیتے ہیں یا ہم میں یہ ہمت ہے کہ ہم زندگی کی کھردری سچائیوں کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر ان کا تجزیہ کرسکیں؟ اپنے ملک کے حالات کو سمجھنے کی کوشش میں ایسے سوالات ضرور سر اٹھاتے ہیں۔بدھ کی شام، اسلام آباد کے ایک بڑے ہوٹل کے شاندار ہال میں...