| |
Home Page
اتوار یکم رمضان المبارک 1438ھ 28 مئی 2017ء
حا مد میر
قلم کمان
May 25, 2017
مسلمانوں اور سکھوں کا محسن

ایک درویش نے دوسرے درویش کی رخصتی کی خبر دی۔ اس خبر میں صدمے کے ساتھ ساتھ ایک خوشگوار حیرت بھی تھی۔ پروفیسر ڈاکٹر جہانگیر تمیمی صاحب کی اس دنیا سے رخصتی کے بعد معلوم ہوا کہ وہ پروفیسر عبداللہ بھٹی صاحب کے ساتھ میرا ذکر خیر کیا کرتے تھے۔ پروفیسر عبداللہ بھٹی صاحب نے کافی عرصے بعد فون کیا اور پروفیسر ڈاکٹر جہانگیر تمیمی صاحب کے...
May 22, 2017
یہ رقص جاری رکھئے

پوری دنیا میں اس رقص کی دھوم ہے۔ سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں عرب ا سلامی امریکن کانفرنس سے قبل خادم الحرمین شریفین شاہ سلمان اورامریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ہاتھوں میں تلواریں تھام کر رقص کیا۔ اس رقص نے دنیا بھر کے مسلمانوں کو ٹرمپ کی وہ تمام تقاریر یاد دلائیں جو وہ اسلام اور مسلمانوں کے بارے میں اپنی انتخابی مہم میں کیا کرتا...
May 18, 2017
نیا جال لائے پرانے شکاری

ہمارا سب سے بڑا المیہ یہ ہے کہ ہم نے آج تک اپنے کسی بھی بڑے قومی المیے کی وجوہات کو تلاش کرنے اور سمجھنے کی سنجیدہ کوشش نہیں کی۔ ہم بار بار غلطیاں کرتے ہیں،بار بار ٹھوکریں کھاتے ہیں، اوندھے منہ گرتے ہیں لیکن غلطی سے سبق حاصل کرنے کی بجائے دوبارہ پرانی غلطیوں کا ارتکاب شروع کردیتے ہیں اور پھر ان غلطیوں سے نئے المیے جنم لیتے ہیں۔...
May 11, 2017
ڈاکٹر منو بھائی

بہت سال پہلے احمد ندیم قاسمی ’’امروز‘‘ نام کے ایک اخبار سے وابستہ تھے۔ ایک دن انہیں اخبار کے ادبی ایڈیشن کے لئے ایک نوخیز شاعر منیر احمد قریشی کی ایک نظم موصول ہوئی۔ قاسمی صاحب اس نئے شاعر کو ذاتی طور پر جانتے تھے۔ انہوں نے منیر احمد قریشی کا نام کاٹ کر وہاں منو بھائی لکھ دیا اور نظم شائع کر دی۔ پھر یہ شاعر منو بھائی راولپنڈی کے...
May 08, 2017
پاکستان 1962ءمیں ٹوٹ گیا تھا؟

کیا آپ یقین کریں گے کہ پاکستان کے ایک وفاقی وزیر قانون نے 1962ءمیں اپنی ڈائری میں لکھ دیا تھا کہ پاکستان ٹوٹ گیا ہے؟ جی ہاں! جنرل ایوب خان کی مارشل لا حکومت کے بنگالی وزیر قانون جسٹس محمد ابراہیم کی کتاب ’’ڈائریز آف جسٹس محمد ابراہیم‘‘ کے مطالعے سے پتا چلتا ہے کہ پاکستان 1971ءمیں نہیں 1962ء میں ٹوٹ گیا تھا۔ 1971ء میں تو مشرقی پاکستان...
May 04, 2017
ایوارڈ کی واپسی

بنگلہ دیشی دوستوں کا اصرار ہے کہ میں 2013ءمیں اپنے والد پروفیسر وارث میر کو شیخ حسینہ واجد کی طرف سے دیئے جانے والے ایوارڈ کو واپس کرنے کی وجوہات تفصیل سے بتائوں۔ بنگلہ دیش کے علاوہ پاکستانی اخبارات میں بھی اس معاملے پر تبصرے کئے جارہے ہیں۔ ایک جائز سوال یہ اٹھایا جارہا ہے کہ بنگلہ دیش کی حکومت نے یہ ایوارڈ میرے والد کو دیا تھا وہ اس...
May 01, 2017
مزید تماشا نہ لگائیں

کیا حکومت پاکستان کا پرنسپل انفارمیشن آفیسر (پی آئی او) کسی اخبار یا ٹی وی چینل پر کوئی خبر رکوا سکتا ہے یا نہیں؟ اس سوال کا جواب دینے کے لئے یہ ناچیز آپ کو ایک ایسی خبر کی مثال پیش کرنا چاہتا ہے جسے ایک انگریزی اخبار میں اشاعت سے روکنے کے لئے ایک فوجی حکومت نے اپنے پی آئی او کے ذریعے بھرپور کوشش کی لیکن یہ کوشش کامیاب نہ ہوئی۔ یہ...
April 27, 2017
ردُّالفساد بذریعہ کتاب

اسلام آباد کےمارگلہ روڈ سے گزرتے ہوئے ایک کھمبے کے ساتھ لٹکے ہوئے بینر پر ایک تصویر دیکھ کر خوشگوار حیرت ہوئی۔ یہ تصویر زاہدہ حنا صاحبہ کی تھی۔ پہلی نظر میں سمجھ نہ آئی کہ اُردوکی ایک معروف لکھاری کی تصویر مارگلہ روڈ پر کیا کر رہی ہے؟ پھر یکے بعد دیگرے عکسی مفتی، کشور ناہید، ڈاکٹر صغریٰ صدف، ناصر علی سیّد، ہارون الرشید تبسم،...
April 24, 2017
گاڈ فادر

جج صاحب نے کہا تھا کہ پاناما کیس میں اُن کافیصلہ صدیوں تک یاد رکھا جائے گا۔ شاید اسی جملے کی کشش مجھے 20اپریل کو کھینچ کر سپریم کورٹ لے گئی۔ فیصلہ دو بجے سنایا جانا تھا لیکن نسیم زہرہ نے ایک کاغذ پر چند الفاظ لکھے اور متوقع فیصلے کی نشاندہی کر دی۔ یہ فیصلہ پڑھ کر میرے جسم میں سنسنی کی لہر دوڑ گئی۔ میں اور عامر متین ایک ہی کرسی پر پھنس...
April 20, 2017
عدالتی فیصلہ یا سیاسی طعنہ

’’میرے دشمن نے مجھے کہا کہ اپنے دشمن سے محبت کرو۔میں نے اس کا کہا مان لیا اور اپنے آپ سے محبت کرنے لگا۔‘‘یہ الفاظ جبران خلیل جبران کے ہیں اور ان الفاظ پر غور کرنے والوں کیلئے نکتہ یہ ہے کہ انسان کا سب سے بڑا دشمن اس کے اندر چھپا ہوتا ہے بس اسے پہچاننے کی ضرورت ہے۔ جبران کہتا ہے کہ میں مسافر ہوں اور جہاز ران بھی ہوں۔ میں ہر روز اپنی...
April 17, 2017
لائیو ٹی وی مناظرہ

انتہا پسندی اور روشن خیالی میں کیا فرق ہوتا ہے؟وہی جو اندھیرے اور اجالے میں ہوتا ہے لیکن جو لوگ اجالوں کے نام پر جھوٹ کے اندھیرے پھیلائیں انہیں کیا کہا جائے؟ افسوس کہ آج ہمارے معاشرے میں ایک طرف مذہبی انتہا پسندوں کی طرف سے کفر کے فتوے ہیں تو دوسری طرف کچھ نام نہاد روشن خیال دانشوروں کے لبرل خیالات بھی فاشزم کی انتہائوں کو چھو رہے...
April 13, 2017
ایک میلے کی کہانی

شہر شہر ادبی میلوں کا سلسلہ پاکستان میں ایک ایسی تبدیلی کا پتا دے رہا ہے جس کا کریڈٹ کوئی سیاسی جماعت یا حکومت نہیں لے سکتی۔ اکثر سیاسی جماعتیں صرف بے ادبی پھیلا رہی ہیں اور حکومتوں کو ادب سے محبت کرنےوالوں کی سرپرستی میں کوئی بڑا فائدہ نظر نہیں آتا لیکن اس کے باوجود ادبی میلوں کی روایات آگے بڑھ رہی ہے۔ پہلے پہل یہ ادبی میلے امیر...
April 10, 2017
بیروت کا ٹیکسی ڈرائیور اور او آئی سی

ابو جعفر بیروت کا ایک ٹیکسی ڈرائیور تھا جو مجھے بیروت سے دمشق چھوڑنے جا رہا تھا ۔ہماری ٹیکسی لبنان سے شام میں داخل ہوئی تو ابوجعفر نے دور سے نظر آنے والی پہاڑیوں کی طرف مجھے متوجہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ گولان کا علاقہ ہے جس پر اسرائیل نے قبضہ کر رکھا ہے۔ ابو جعفر نے ایک ٹھنڈی آہ بھری اور کہا کہ اسرائیل نے امریکہ کے ساتھ مل کر بیروت...
April 06, 2017
دہشت گردی کے خلاف بیانیہ

پارا چنار کے بعد لاہور میں دہشت گردی کا دلدوز واقعہ یہ ثابت کرنے کے لئے کافی ہے کہ دہشت گردی کے واقعات میں کمی ضرور ہوئی ہے لیکن دہشت گردی بدستور ایک چیلنج بن کر پوری قوم کے سامنے کھڑی ہے۔ اس واقعہ کی ذمہ داری جماعت الاحرار نے قبول کی ہے جو تحریکِ طالبان پاکستان کا ایک باغی گروپ ہے۔ 2014میں نواز شریف حکومت نے تحریکِ طالبان پاکستان کے...